اور کے بہترین اور معیاری مضامین اور جدید سائنس اور ایجادات کے لیے ہمارے ویب سائٹ پر آئیں۔ www.pakjob.net

Latest

Sunday, November 7, 2021

عمرانیات کیا ہے؟

عمرانیات کیا ہے؟

عمرانیات دو الفاظ سے مل کر بنا ہے۔ یعنی عمران اور یات۔ عمران کا مطلب ہے آبادی، اجتماع اور یات کے معنی ہیں علم ہونا۔ تو عمرانیات کا لفظی مطلب آبادی کا علم ہے۔ انگلش زبان میں عمرانیات کے لیے"Sociology" کی اصطلاح عام ہے۔ ہماری آج کل کی روزمرہ زبان میں سوشیالوجی کا بہترین ترجمہ سماجیات ہے۔ یعنی سماج کا علم۔ 



مغربی دنیا کے فرانسیسی عمرانی مفکر اگست کانٹے (1798-1852) نے پہلی بار سوشیالوجی کی اصطلاح استعمال کی۔ جس سے مراد اجتماعی زندگی کے بارے میں باضابطہ علم تھا۔ یہ اصطلاح اس مضمون کا تعارف بن گئی۔


1839 میں متعارف ہونے والی یہ اصطلاح آج بھی رائج الوقت ہے۔ اجتماعی زندگی کے باضابطہ علم کی ضروریات اس لیے بھی محسوس کی گئی کیونکہ ان دنوں فرانس میں صنعتی انقلاب کی وجہ سے معاشرتی زندگی میں بے شمار مسائل نے سر اٹھایا۔ جس نے لکھاریوں، مفکروں اور صاحب بصیرت لوگوں کو سنجیدگی سے سوچنے پر مجبور کیا۔ معاشرے کی بگڑتی ہوئی صورتحال دیکھ کر اس نے ضرورت محسوس کی کہ ایک ایسا علم ہو جو سائنسی اصولوں کے مطابق ہو اور معاشرتی مظاہر کا مطالعہ کر سکے۔  اور اسی علم کو عمرانیات کا نام دیا گیا۔ 


عمرانیات در اصل ایک ایسا علم ہے کس کا تعلق اجتماعی زندگی یا گروہ سے وابستہ ہے۔ کوئی بھی شخص نہیں ہے جو اکیلے زندگی گزارنے کا دعویٰ کر سکے۔ کیونکہ وہ اپنی ہر ضرورت اور فرحت کے لیے اپنے جیسے دوسرے لوگوں کا محتاج ہوتا ہے۔ کیونکہ گروہ ہی وہ واحد طریقہ اور ذریعہ ہے جو کہ ہر انسان کی تمام ضروریات اور سہولتوں کو پورا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ 

فرد کی حفاظت اور بقاء دونوں گروہی زندگی سے وابستہ ہیں۔ 


بہت سے محتلف گروہوں سے معاشرہ بنتا ہے۔ آسان الفاظ میں معاشرے کی تشریح اس طرح کی جا سکتی ہے کہ اسے ایک بڑی عمارت سمجھا جائے اور یہاں رہنے والے ہر ایک فرد کی حیثیت اینٹوں کی طرح ہے جس اینٹوں سے  ملکر عمارت بنی ہوئی ہے۔

 اسی طرح انسانوں کا باہمی ربط اور باہمی انحصار ایک معاشرتی زندگی یا معاشرے کو تشکیل دیتا ہے۔


اس معاشرے کا مطالعہ عمرانیات کی اص روح ہے۔ گروہی زندگی کا فرد پر براہ راست اثر مرتب ہوتا ہے۔ کیونکہ معاشرے میں رہ کر یہ ممکن اور آسان ہے کہ ایک فرد کی شحصیت کی تعمیر ہو اور اس کے رویوں اور خواہشات کی تکمیل ہو۔


عمرانیات کا تعلق ان عمرانی مظاہرے سے ہے جو افراد سے ملنے، تعاون کرنے، جھگڑے، محبت و نفرت وغیرہ سے رونما ہوتے ہیں۔  یعنی تفاعل کا عمل گروہی ہی زندگی کی بنیاد ہے۔

No comments:

Post a Comment